ترکی کے راستے رقم اور دہشت گرد اسمگل کرنے میں ملوث گروہ…

3 تعبيرية بدھ 11 ستمبر‬‮ 9102 - (دوپہر 5 بجکر 05 منٹ)

شیئر کریں:

ترکی کے راستے رقم اور دہشت گرد اسمگل کرنے میں ملوث گروہ… قاہرہ:مصری حکام کا کہنا ہے کہ ترکی میں مفرور اخوان کے رہ نماؤں نے ایک دہشت گردانہ منصوبے کے تحت ریاستی صلاحیتوں کو نقصان پہنچانا تھا۔

تفصیلات کے مطابق مصری وزارت داخلہ نے اخوان المسلمون کے 16 ارکان کی گرفتار کیا ہے۔ مصری قومی سلامتی ایجنسی نے ترکی میں مفرور اخوان کے رہ نماؤں کے ایک دہشت گردانہ منصوبے کی نگرانی کی جس کا مقصد ریاستی صلاحیتوں کو نقصان پہنچانا تھا۔

پولیس نے کارروائی کے دوران ترکی کے راستے مصر میں دہشت گردی کے لیے رقوم کی ترسیل میں ملوث16 عناصر کوحراست میں لے لیا ۔

قومی سلامتی کے شعبے نے ترکی میں تنظیم کے مفرور رہ نماوں کے اس منصوبے کی نگرانی کی جس کا مقصد ریاست کی معاشی صلاحیتوں کو نقصان پہنچانے کے ساتھ ساتھ اہم تنصیبات اور سہولیات، مسلح افواج، پولیس اور عدلیہ کے خلاف ملک میں انتشار پیدا کرنے کے لئے کئی طرح کے متنازعہ کارروائیاں انجام دینا ہے تاکہ اخوان دوبارہ سیاسی منظر نامے کی طرف واپس آ سکے۔

میڈیا کے ذریعے سامنے آنے والی معلومات سے اخوان کے اس منفی اقدام کی کئی جہتوں کا انکشاف ہوا، جس کا مقصد زر مبادلہ کی بیرون ملک اسمگلنگ، مصر کے سیکیورٹی اداروں کو مطلوب اخوان عناصر ترکی کے راستے یورپ منتقل کرنے اور دیگر منفی کارروائیوں میں ملوث رہی ہے۔

قومی سلامتی کمیٹی کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ ترکی کی ریاست میں اخوان کے مفرور عناصر کی نشاندہی کرنے میں کوششیں کامیاب ہو گئیں اور اس اسکیم کی تیاری میں شامل ہیں یاسر محمد حیلمی زنانی، محمود حسین احمد حسین، ایمن احمد عبدل غنی حسن اور مدحت احمد محمود الحداد کو حراست میں لیا گیا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سیکیورٹی حکام کے ہاتھوں حراست میں لیے گئے اخوان کے اسمگلر گروپ کے 16 ارکان کو عدالت میں پیش کیا گیا ہے جہاں ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی شروع کی جا رہی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اخوان کے سیل کی گرفتاری سے تنظیم کو مصر میں اپنی سرگرمیوں کو آگے بڑھانے میں ایک بڑا دھچکا لگا ہے۔