اسلام آباد انتظامیہ کا ڈی چوک خالی کرنے کیلیے مظاہرین کو 2 گھنٹے کا الٹی میٹم

1221 تعبيرية منگل 29 مارچ‬‮ 6102 - (شام 6 بجکر 31 منٹ)

شیئر کریں:

اسلام آباد انتظامیہ کا ڈی چوک خالی کرنے کیلیے مظاہرین کو 2 گھنٹے کا الٹی میٹم مظاہرین کے خلاف آپریشن کا فیصلہ وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں کیا گیا، ذرائع اسلام آباد: ڈی چوک کو خالی کرنے کے لیے مظاہرین کو 2 گھنٹے کا الٹی میٹم دے دیا گیا جب کہ پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری ریڈزون پہنچ گئی۔  اسلام آباد میں وزیراعظم نوازشریف کی زیر صدارت اہم اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار،وفاقی وزیراطلاعات پرویز رشید ، وفاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈار، وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق،وفاقی وزیر عبدالقادربلوچ، سینیٹرمشاہد اللہ، ڈاکٹرآصف کرمانی اور عرفان صدیقی شریک تھے۔ اجلاس میں اسلام آباد دھرنے کی صوتحال سمیت لاہور میں آپریشن پر بھی مشاورت کی گئی۔ دوسری جانب ڈی چوک سے مظاہرین کو ہٹانے کے لیے آج رات آپریشن کا فیصلہ کیا گیا، مظاہرین کے خلاف آپریشن کا فیصلہ وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں کیا گیا۔ اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ نے مظاہرین کو ڈی چوک خالی کرانے کیلیے 2 گھنٹے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا کہ 2 گھنٹے میں ڈی چوک خالی نہ ہوا تو آپریشن ہوگا، پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری ریڈزون پہنچ گئی۔ ڈی چوک میں مذہبی جماعتوں کا دھرنا تیسرے روز بھی جاری ہے جس کے باعث وفاقی دارالحکومت کا نظام ٹھپ ہوکر رہ گیا جب کہ جڑواں شہروں کے بیشتر علاقوں میں موبائل فون سروس اور میٹرو بس سروس بھی بند ہے، مظاہرین کی جانب سے میٹرو بس اسٹیشن کی توڑ پھوڑ کے تخمینے کے لئے کمیٹی قائم کردی گئی جب کہ کمیٹی نے میٹرو اسٹیشن پر لگے سی سی ٹی وی کیمروں کا کا ریکارڈ طلب کرلیا ہے۔