مریم نواز اور ان کے بھائیوں کی کمپنیاں اور جائیداد ؟ تفصیلات نے تہلکہ مچا دیا

2585 تعبيرية پیر 4 اپریل‬‮ 6102 - (صبح 11 بجکر 4 منٹ)

شیئر کریں:

برائے مہربانی انتظار فرمائیں، اردو اخبار آپ کے لئے ویڈیو لوڈ کررہا ہے

 پانامہ پیپرز کی طرف سے کالادھن چھپانے کے لیے موجود لاکھوں کمپنیوں کابھانڈا پھوڑے جانے کے بعد سیاسی طورپر ہلچل مچ گئی اور پاکستان کے دوبڑے خاندان بھی اسی فہرست میں آگئے ہیں اور اب شریف خاندان سے متعلق مزید تفصیلات سامنے آگئی ہیں۔

 

رپورٹ کے مطابق وزیراعظم نوازشریف کے تین بچے مریم نواز، حسن اور حسین نواز کئی کمپنیوں کے مالکان تھے یا بھی اْنہیں یہ اختیارتھا کہ رقم کالین دین کرسکتے تھے۔ مریم صفدر1993ء اور94میں بنائی جانیوالی برطانیہ میں موجود نیلسن انٹرپرائزز لمیٹڈ اور نیسکول لمیٹڈ کی مالکن تھیں جبکہ وزیراعظم نوازشریف کے پہلے دورحکومت کا اختتام بھی 1993ء4 میں ہی ہواتھا۔یہ کمپنیاں برطانیہ میں موجود پراپرٹی کی مالک ہیں جوان کمپنیوں کے مالکان کے خاندان کے لیے استعمال ہوتی ہیں ، جون 2007ء میں حسین اور مریم نواز شریف کی طرف سے ایک دستاویزات پر دستخط کیے جوکہ نیسکول ، نیلسن اور ایک او رکمپنی کیلئے 13.8ملین ڈالر کے جنیوامیں موجود ڈوئچے بینک سے قرض کے حصول اور برطانوی پراپرٹی کا حصہ تھا۔

 


 

جولائی 2014 ء میں دونوں کمپنیاں ایک ایک اور ایجنٹ کو ٹرانسفر کردی گئیں کیونکہ Mossack Fonsecaکو علم ہوا کہ مریم صفدر وزیراعظم نوازشریف کی صاحبزادی ہیں اور جولائی 2012ء کے آغاز سے ہی سال میں دومرتبہ ان کمپنیز کی سرگرمیوں کی جانچ پڑتال شروع کردی گئی تھی۔ بتایاگیاہے کہ حسن نوازشریف ہنگون پراپرٹی ہولڈنگز لمیٹیڈ کے واحد ڈائریکٹر تھے جوکہ فروری 2007 ء4 میں بنائی گئی اور بعد میں اگست 2007ء4 میں اسی کمپنی نے 11.2ملین ڈالر کے عوض لائبریامیں موجود کاسکون ہولڈنگز اسٹیبلشمنٹ لمیٹڈ خرید لی لیکن حسن نوازشریف کے سیاسی طورپر بے نقاب شخصیت ہونے پر Mossack Fonsecaنے ہنگون کمپنی کی وکالت کرنے سے انکار کردیا۔