جہاز کی پرواز کے دوران وہ وقت جب پائلٹ کو بات کرنے کی اجازت نہیں ہوتی، جانئے وہ بات جو مسافروں کو معلوم نہیں

7 تعبيرية ہفتہ 29 جولائی‬‮ 7102 - (شام 6 بجکر 01 منٹ)

شیئر کریں:

جہاز کی پرواز کے دوران وہ وقت جب پائلٹ کو بات کرنے کی اجازت نہیں ہوتی، جانئے وہ بات جو مسافروں کو معلوم نہیں آپ جب بھی فضائی سفر پر جاتے ہیں تو آپ کی سلامتی کے لئے پائلٹ کے کندھوں پر بھاری ذمہ داری ہوتی ہے۔ طیارے کے فضاءمیں بلند ہونے کے کچھ دیر بعد اکثر آٹو پائلٹ آن کر دیا جاتا ہے، لیکن اس دوران پائلٹ طیارے کو لگنے والے جھٹکوں، سلامتی کے دیگر امور، مختلف ریڈیو ٹاورز کے درمیان ہونے والی بات چیت اوردیگر ایسے امور پر توجہ دے رہے ہوتے ہیں۔ وہ موسمی راڈار پر بھی نظر رکھتے ہیں تا کہ آنے والے حالات سے باخبر رہیں۔ وہ طیارے کی بلندی میں کمی یا زیادتی اور پرواز کے متبادل روٹس وغیرہ کی معلومات پر بھی نظر رکھتے ہیں۔

ان سب کاموں کے ساتھ پائلٹوں کو اخبار پڑھنے کی اجازت ہوتی ہے جبکہ وہ آپس میں بات چیت بھی کر سکتے ہیں، البتہ انہیں آپس میں غیر ضروری گفتگو سے پرہیز کرنا ہوتا ہے۔ خصوصاً یہ اصول ٹیک آف کے بعد 10ہزار فٹ کی بلندی سے اوپر جانے تک اور لینڈنگ سے پہلے 10ہزار کی بلندی سے نیچے آنے کے بعد سختی سے نافذ کیا جاتا ہے۔ ان اوقات میں پائلٹ آپس میں کوئی بات نہیں کرتے، سوائے ٹیک آف یا لینڈنگ کے متعلق کسی ضروری بات کے۔