اعتماد کا ووٹ: پی ٹی آئی کارکنان کل عمران خان سے اظہاریکجہتی کیلئے ڈی چوک پر جمع ہوں گے

1 تعبيرية جمعہ 5 مارچ‬‮ 1202 - (صبح 11 بجکر 11 منٹ)

شیئر کریں:

اعتماد کا ووٹ: پی ٹی آئی کارکنان کل عمران خان سے اظہاریکجہتی کیلئے ڈی چوک پر جمع ہوں گے اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف کے کارکنان کل وزیراعظم عمران خان سے اظہار یکجہتی کیلیے ڈی چوک پر جمع ہوں گے، عمران خان کل قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لیں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے کل قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کے معاملے پر تحریک انصاف کے کارکنان سیاسی میدان میں کپتان کے حق میں پورے زور سے سرگرم ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے کارکن وزیراعظم عمران خان سے اظہاریکجہتی کیلئے کل ڈی چوک پہنچیں گے، جڑواں شہروں سمیت جہلم اور اٹک و دیگرعلاقوں سے پی ٹی آئی کارکنان کل دن 11 بجے ڈی چوک پر اکٹھے ہوں گے، تاکہ وزیراعظم سے اظہار یکجہتی کرسکیں۔

دوسری جانب وزیراعظم سے اظہار یکجہتی کے لیےکارکنان نے سوشل میڈیا کا محاذ سنبھال لیا اور کارکنوں نے پورے پاکستان میں” میں بھی عمران خان ہوں” مہم شروع کردی ہے۔

مہم کا آغاز پی ٹی آئی ورکرز نے اپوزیشن کے خلاف جوابی حکمت عملی کے طور پر کیا، مہم کے ذریعے کارکن عمران خان کے حق میں بھرپورعوامی حمایت سامنے لائیں گے۔

مہم کی کامیابی کے لیے تمام سوشل میڈیا ٹولز استعمال کیے جائیں گے ، واٹس ایپ، فیس بک، ٹویٹر، یوٹیوب، اور انسٹا گرام سمیت ہر فورم پر مہم چلائی جائے گی مہم کے ذریعے وزیراعظم عمران خان کی پالیسیوں پر اعتماد کا اظہار کیا جائے گا۔

مہم کا آغاز پی ٹی آئی کے دیرینہ ورکرز،شہزاد گل اور طارق دین نے کیا ، سینیٹ انتخابات میں خریدو فروخت اور وزیراعظم کے بیانیے پر مبنی دستاویزی فلم بھی جاری مہم کے تحت وزیراعظم اور حکومت کی اہم کامیابیاں سامنے لائی جائیں گی۔

حکومتی میدان میں ہر کامیابی پر مبنی خصوصی ڈاکیومنٹریز بنا دی گئیں، مہم کے تحت وزیر اعظم کے فلاحی منصوبے، معاشی میدان میں کامیابیوں کو بھی اجاگر کیا جائے گا، کورونا وباپر قابو پانے کی حکمت عملی ،15 سو ارب ریلیف پیکج بارے آگاہ کیا جائے گا جبکہ بیرونی قرضوں کی بمع سود واپسی، نئے قرض نہ لینے کے بارے میِں بھی بتایا جائے گا۔

عمران خان، احساس پروگرام کے ذریعے غریبوں کا سہارا کیسے بنے، مہم کا حصہ ہوگا 50 لاکھ گھروں کا منصوبہ، کتنے لوگوں کو چھت ملی، زیر تعمیر گھر کتنے، سب سامنے لایا جائے گا جبکہ 10 بلین ٹری سونامی منصوبہ، صحت سہولت کارڈ،نوجوانوں کے لیےقرضوں بارے مہم چلائی جائے گی۔

مہم کے دوران امپورٹ، ایکسپورٹ، ادارہ جاتی اصلاحات کو عوام کی سطح پر اجاگر کیا جائے گا جبکہ ملکی داخلی سیکورٹی ،خارجہ محاذ پر کامیابیوں کو مہم کا حصہ بنایا جائے گا اور افغان امن عمل، فاٹا کا انضمام۔،ترقیاتی منصوبوں کو اجاگر کیا جائے گا۔

احتساب کے عمل اور کرپٹ سیاستدانوں سے متعلق زیر وٹالرینس کی کپتان کی پالیسی سامنے لائی جائے گی اور مسئلہ کشمیر کو عالمی فورم پر اٹھانے، مسلم امہ کی نمائندگی، ریاست مدینہ کا ڈھانچہ مہم میں شامل قبضہ مافیا سے اراضی واگزار کرانے، جعلی ہاوسنگ سوسائٹیز کے خلاف کارروائی بھی مہم میں شامل اوورسیز پاکستانیوں کے لیےنئی پالیسیوں، کسانوں کو ریلیف، شوگر کرائسز تحقیقات کو بھی اٹھایا جائے گا۔